×

هشدار

JUser: :_بارگذاری :نمی توان کاربر را با این شناسه بارگذاری کرد: 830

عزادار حسین علیہ السلام کے آنسوؤں کی عظمت

تیر 21, 1393 350

یہ کہ آخر کیونکر جنت کے سردار کے لئے آنسو بہانا واجب ہے ، یہ بھی ایسے امور میں شامل ہے کہ جن کی طاعت گزاری ضروری ہے اور جن کے

بارے میں مثالیں پیش کی گئیں ۔ یہ ایک ایسا امر ہے جو مقدس مقنن  و خدا حکیم کی طرف سے مشخص ہوا ہے ۔ اسی طرح آنحضرت علیہ السلام کی زیارت کا بھی بہت اجر و ثواب ہے ۔
کتاب شریف کامل الزیارت میں ایک روایت نقل ہوئی ہے اور یہ روایت بیان کرنے سے پہلے میں یہ بتانا چاہوں گا کہ یہ کتاب نہایت ہی قابل اعتبار سمجھی جاتی ہے ۔
حضرت امام صادق علیہ السلام اپنے دوستوں میں سے ایک بنام مسمع سے فرماتے ہیں کہ
اے مسمع تم عراق کے رہنے والے ہو ، کیا تم حضرت امام حسین علیہ السلام کی قبر پر حاضری کے لئے جاتے ہو ؟
اس نے عرض کیا : نہیں ، میں بصرہ کے قریب رہتا ہوں اور ہمارے دشمن گروہ ناصبی اور اس جیسے بہت زیادہ ہیں اور میں محفوظ نہیں ہوں کیونکہ مجھے ڈر ہے کہ کہیں میرے بارے میں سلیمان کے بیٹے کو کوئی خبر نہ کر دے ۔
 اور کہیں ایسا نہ ہو کہ وہ میرے ساتھ کوئی ایسا کام کرے جو دوسروں کے لئے عبرت ہو ، اس لئے احتیاط کرتا ہوں اور آنحضرت کی زیارت کے لئے نہیں جاتا ہوں ۔
حضرت صادق علیہ السلام نے فرمایا :
کیا تمہیں یاد ہے کہ اس عظیم شخص ( حضرت امام حسین علیہ السلام ) نے کس قدر زیادہ تکالیف اور دکھوں کا سامنا کیا ؟
اس نے جواب دیا : جی ہاں
آنحضرت نے فرمایا :
کیا تم ان کے لئے غم اور آہ و زاری کرتے ہو ؟
اس نے جواب دیا : جی ہاں ، خدا کی قسم جب میں اس عظیم ہستی کی مصیبتوں کو یاد کرتا ہوں تو اس قدر غمزدہ اور خوف زدہ ہو جاتا ہوں کہ میرے اہل و عیال بھی میری اس حالت سے باخبر ہو جاتے ہیں اور میری حالت اس قدر بگڑ جاتی ہے کہ کھانے پینے کو جی بھی نہیں چاہتا اور غم اور تکلیف میرے چہرے سے عیاں ہو جاتی ہے ۔
آنحضرت نے فرمایا :
خدا تمہارے ان آنسوؤں پر رحمت برساؤ یعنی خدا تعالی تمہارے ان آنسوؤں کی وجہ سے تم پر رحمت برسائے ۔ جان لو کہ تمہارا شمار ان لوگوں میں ہو گا جنہوں نے ہماری خاطر آہ و زاری کی اور ہماری مسرت اور خوشی پر خوش ہو ئےاور ہمارے غم کی وجہ سے وہ غمگین ہوئے اور ہمارے خوف میں مبتلا ہونے سے وہ خوفزدہ ہوئے اور ہمارے محفوظ ہونے سے وہ خود کو محفوظ سمجھتے ہیں ۔ دیکھ لینا حتما موت کے قریب تم ہمارے اجداد کو اپنے سرہانے پاؤ گے جو ملک الموت سے تمہاری سفارش کریں گے اور تمہیں جو  بشارت  دیں گے وہ ہر چیز سے اعلیٰ ہے اور دیکھو گے کہ ملک الموت ایک بیٹے کے لئے مہربان ماں سے بھی زیادہ تم پر مہربان و رحیم ہو گا ۔

Login to post comments