×

هشدار

JUser: :_بارگذاری :نمی توان کاربر را با این شناسه بارگذاری کرد: 830

امام زمانہ (عج) تشریف کیوں نہیں لاتے؟

مرداد 13, 1393 521

حقیقت یہ ہے کہ دنیا کے تمام واقعات کے لئے بعض تمہیدات و مقدمات کی ضرورت ہوتی ہے اور حضرت حجت (ع) کا ظہور بھی ایسا ہی ہے جس

کے لئے ماحول کو تیار ہونا چاہئے، صاحبان ایمان میں سے ایک بڑی جماعت کو امام زمانہ (ع) کی نصرت اور مدد اور ان کی راہ میں جانبازی کے لئے تیار ہونا چاہئے تا کہ امام (عج) کا نجات بخش انقلاب ممکن ہوسکے۔ بے شک جب ماحول تیار ہوگا تو امام (عج) تشریف لائیں گے۔ تا ہم موجودہ زمانے میں رکاوٹیں بہت زیادہ ہیں جن کی بنا پر امام (ع) ظہور نہیں فرما رہے ہیں۔
سب سے اہم رکاوٹیں کچھ یوں ہیں:
دنیا امام مہدی (عج) کو خیرمقدم کہنے کے لئے تیار نہیں ہے، دنیا معنویات اور الہی اقدار سے جدا ہوچکی ہے، دنیا والے گناہوں اور فساد و برائی کے دلدل میں ڈوبے ہوئے ہیں، اور دنیا بھر میں حکومت عدل کے قیام کے لئے ضروری، انسانی قوت گویا موجود نہیں ہے۔
بہر حال کہا جاسکتا ہے کہ امام مہدی (عَجَّلَ اللهُ فَرَجَهُ الشریف) کے عدم ظہور کا اہم ترین سبب یہ ہے کہ اس ظہور کے لئے مناسب ماحول اور مساعد حالات فراہم نہیں ہوئے ہیں۔ چنانچہ ظہور کو قریب تر کرنے کے لئے ماحول کی فراہمی کے لئے کوشش کرنے کی ضرورت ہے، معاشروں کی اصلاح کی ضرورت ہے؛ امام مہدی (عج) کی راہ میں جانبازی کرنے کے لئے محبان رسول و آل رسول (ص) میں سے افرادی قوت کی تعلیم و تربیت کرنے کی ضرورت ہے؛ اور دوسری طرف سے ہمیں پروردگار عالمین کے سامنے نیازمندی کا ہاتھ پھیلانا چاہئے اور دعا کرنی چاہئے کہ اللہ کا ارادہ اس امر کے شامل حال ہو:
اس سلسلے میں مزید معلومات جاننے کے لئے درج ذیل کتب سے رجوع فرمائیں:
1. عصاره خلقت دربارة امام زمان (عج) / آیت الله جوادی آملی.
2. حكومت جهانی امام عصر / گفتار فلسفی.
حدیث:
رسول اللہ (صلی اللہ علیہ و آلہ) نے فرمایا:
{افضل الاعمال انتظار الفَرَجِ}۔ (1)
"بہترین اور برترین عمل فَرَج (وسعت و فراخی) کا انتظار ہے"۔
حوالہ جات:
1۔ بحارالانوار، ج 52، صفحة 122.

Login to post comments