×

هشدار

JUser: :_بارگذاری :نمی توان کاربر را با این شناسه بارگذاری کرد: 830

ندائے آسمانی سے قبل کیا ہوگا؟

مرداد 14, 1393 616

آسمانی چیخ سے قبل و بعد کیا ہوگا؟ روایات میں ہے کہ دو ندائیں سنائی دینگی لوگوں کی توجہ اپنی جانب مبذول کرائینگی جو درحقیقت

زمین پر عدل الہی کی علامت اور ثبوت ہے۔ ایک ندا آسمانی ہے اور منادی جبرائیل ہیں اور دوسری ندا زمینی ہے اور منادی شیطان ہے، کہ گویا دوسری ندا شیطان صفت سفیانی کے خروج کا اعلان ہے۔ امام باقر(ع) ایک طویل حدیث کے ضمن میں ظہور کی علامتیں بیان کرتے ہوئے فرماتے ہیں:
"امام قائم(عج) کے ظہور سے قبل، ناگزیر دو صدائیں سنائی دیں گی: ایک آسمانی صدا اور جبرائیل کی ندا ہے اور دوسری زمینی صدا ہے جو شیطان لعین کی آواز ہے"۔
رسول خدا (ص) نے فرمایا:
"یظهَرُ فی السَّماءِ آیةٌ لِلَیلَتَینِ تَخلوُانِ مِن شَهرِ رَمَضانَ."
(الملاحم و الفتن: سید بن طاوس، ص35)
"دوئم رمضان کی شب ایک نشانی آسمان میں ظاہر ہوگی"
امام صادق(ع) نے فرمایا:
"ووجه وصدر یظهران للناس فی عین الشمس"۔
"ایک چہرہ اور ایک سینہ سورج کے مرکز میں لوگوں پر ظاہر ہوگا"۔
امام صادق(ع) کے اس ارشاد کا ثبوت رسول اللہ(ص) کی یہ حدیث شریف ہے کہ:
"جس سال آسمانی چیخ سنائی دے گی اس سے قبل ماہ رجب میں ایک نشانی دکھائی دے گی"، پوچھا گیا: وہ نشانی کیا ہے؟ فرمایا: "ایک چہرہ چاند میں دکھائی دے گا اور فضا میں ایک ہاتھ کا واضح پنجہ ظاہر ہوگا"۔
(كتاب الغیبه : نعمانی، ص134 * بحار الانوار : مجلسی، ج52: ص233* منتخب الاثر: صافی، 441.)
لوگوں کا رد عمل
امام صادق(ع) کے فرمان کے مطابق: صیحہ یا ندا اس وقت ہے جب معاشرے اختلافات کا شکار ہونگے اور تفرقہ اور جدائی کے سائے ہر جگہ منڈلا رہے ہونگے۔ ابتداء میں آسمانی مبشر کی آواز سماعت نوازی کرے گی اور اس کے بعد ہاتھ کی ہتھیلی ظاہر ہوگی اور اس کے بعد آسمانی چیخ سنائی دے گی۔
امیرالمومنین(ع) آخرالزمان کے حالات کے بارے میں فرماتے ہیں:
"اس وقت عوام کے امور ہرگز اصلاح پذیر نہ ہونگے اور وہ ایک مرکز کے گرد ہرگز اکٹھے نہ ہوسکیں گے حتی کہ آسمانی سے منادی ندا دے کہ: فلاں شخص کی طرف جاؤ اور اس سے دوری اختیار مت کرو۔ اس کے بعد آسمان میں ایک ہتھیلی ظاہری ہوگی اور اس فرد کی طرف اشارہ کرے گی"۔
(الملاحم و الفتن: سیّد بن طاوس؛48* بشارة الاسلام: كاظمی، ص79* روز گار رهایی: كامل سلیمان، ج2: ص867.)
لوگوں کے رد عمل کے بارے میں امام صادق (ع) نے فرمایا:
"لوگ آسمانی چیخ سن کر اس طرح ساکن و جامد ہونگے جیسا کہ ان کے سر پر پرندہ بیٹھا ہوا ہو (اور اس کے اڑنے کا خوف ہو)۔ تمام دشمنان خدا آسمانی چیخ کے سامنے میں خاضع و منکسر ہونگے۔ اگر وہ بعض علائم میں شک بھی کریں گے صیحہ کے بارے میں شک نہیں کریں گے کیونکہ منادی امام قائم(عج) کا نام اور ان کے آباء طاہرین(ع) کے نام لے کر ندا دےگا"۔
منابع:
( كتاب الغیبه : نعمانی، ص136 و ص150* الزام الناصب: حائری، ص226 و ص176* روزگار رهایی: كامل سلیمان، ج2:ص887.)
ترجمہ : فرحت حسین مہدوی

Login to post comments