×

هشدار

JUser: :_بارگذاری :نمی توان کاربر را با این شناسه بارگذاری کرد: 830

قرب ظہوراور عربوں کا حال

مرداد 15, 1393 479

رسول اللہ اور علی (علیہما السلام) نے فرمایا: جب تم میری اولاد کو مقہور و مغلوب کروگے بنی اسرائیل کی طرح حیران و سرگردان ہوجاؤگے؛

گمراہ کنندگان کی پیروی کرو گے، راہ خدا کے مجاہدین سے رشتہ منقطع کروگے اور ان کے دشمنوں سے جا ملوگے، اور جب ان کے وہ وعدے خاک میں ملیں گے تو ہر شخص کی آزمائش اور پاک ہونے کا وقت ہوگا اور پردہ ہٹے گا، انتظار کی گھڑی اختتام پذیر ہوگی وعدہ قریب ہوگا؛ تمہارے لئے ایک ستارہ مشرق سے طلوع ہوگا جو چودہویں کے چاند کی طرح تابناک ہوگا جب تم ان علائم کو دیکھو تو توبہ کرو اور گناہوں کو خود سے دور کرو اور جان لو کہ مشرق سے ہونے والے ستارے کی پیروی کروگے تو وہ تمہیں ہدایت پہنچائے گا اور انتشار اور اختلاف اور حیرت و سرگردانی سے نجات دلائے گا۔ (1)
رسول اللہ (ص) اور امیرالمومنین (ع) کا خطاب عربوں سے ہے اور آج کے زمانے میں اگر اس کی تشریح کرنا چاہیں تو گویا عربوں کو امریکہ اور اسرائیل کے تابع مہمل بننے سے روکا گیا ہے اور آج کے زمانے میں اسرائیل اور امریکہ کی اعلانیہ پیروی کرتے ہوئے مسلمانوں اور عربوں کو ان کے خون میں نہلانے اور مسلمانوں کے درمیان تفرقہ ڈال کر عالمی کفر کے اہداف و مقاصد پورے کرنے سے منع کیا گیا ہے۔ عربوں کو آج بھی وعدے دیئے جارہے ہیں اور پھر وقت آنے پر انہیں بے یار و مددگار چھوڑا جارہا ہے اور گویا یہی زمانہ ہے امتحان کا اور پاکیزہ ہونے کا جس کے بعد مشرق سے ستارے کا طلوع ہونے کا مرحلہ آتا ہے جس کی پیروی اتحاد کے قیام اور انتشار سے نجات کا سبب ہے۔
امام محمد باقر (ع) فرماتے ہیں: ہاشم کی نسل سے ایک جوانمرد ـ جس کے دائیں ہاتھ میں ایک علامت ہے ـ خراسان سے سیاہ پرچموں کے ہمراہ قیام کرے گا جو چاند کی مانند تابندہ ہوگا اور اس کے لشکر کا سپہ سالار شعیب بن صالح ہوگا۔ وہ سفیانی کے خلاف لڑے گا اور اس کے لشکر کو ہزیمت سے دوچار کرے گا۔ (2)
حوالے جات:
1۔ ترجمه 13 بحار، دوانی ص 335 و 351۔ ارشاد شیخ مفید.
2۔ نوائب الدهور و علائم الظهور ج 2 ص 402۔ امام مهدی ص 428 ۔ عقد الدرر ص 128۔ ترجمه ملاحم و الفتن ص 36 ۔ ملاحم و الفتن ابن طاووس ص 77 و 104۔ امام مهدی از تولد تا بعداز ظهور، ص294 و 296۔
ترجمہ: فرحت حسین مہدوی

Login to post comments