×

هشدار

JUser: :_بارگذاری :نمی توان کاربر را با این شناسه بارگذاری کرد: 830

دوا سازي کے يورپي نگران ادارے

مهر 29, 1392 452

يورپ کے دوا سازي سے متعلق نگران ادارے European Medicines Agency کو توقع ہے کہاسے آئندہ برس

نئي دواۆ ں کے ليے موصول ہونے والي درخواستوں ميں معمولي اضافہ ہو گا جو دوا سازي کي صنعت کي جانب سے ايک حوصلہ افزاء پيشرفت ہے-

لندن ميں قائم ادارے کا کہنا ہے کہ اس کي پيش گوئي کے مطابق اسے سن 2012ء ميں انساني استعمال کے ليے نئي ادويات کي 52 درخواستيں موصول ہونے کي توقع ہے، جبکہ اس کے مقابلے ميں 2011ء ميں موصول ہونے والي درخواستوں کي تعداد 47 تھي-

 عام ادويات کي درخواستوں کي تعداد رواں برس 45 کے مقابلے ميں کم ہو کر 39 رہنے کي توقع ہے-

 يورپ اور امريکہ کے ادارہ برائے خوراک و ادويات کي جانب سے حال ہي ميں منظور کردہ منفرد ادويات ميں جلد کے سرطان ميلانوما، ہيپاٹائٹس سي اور جسم کے دفاعي نظام پر حملہ آور ہونے والي بيماري لُوپس کے علاج کي ادويات شامل ہيں-آئندہ برس يورپ کے دوا سازي کے نگران ادارے کو موصول ہونے والي درخواستوں ميں اضافہ متوقع ہےآئندہ برس يورپ کے دوا سازي کے نگران ادارے کو موصول ہونے والي درخواستوں ميں اضافہ متوقع ہے

 سرمايہ کاروں کو اس بات پر تشويش ہے کہ گزشتہ ايک دہائي ميں بڑي دوا ساز کمپنيوں کي جانب سے تحقيق پر اربوں ڈالر خرچ کر ديے گئے ہيں مگر منافع  کي شرح کم ہے-

 Deloitte and Thomson Reuters کي ايک حاليہ تحقيق کے مطابق گزشتہ سال دنيا کي بارہ بڑي کمپنيوں ميں نئي ادويات پر تحقيق کے بعد ادويات کي فروخت سے حاصل ہونے والے منافع ميں اوسطا 8.4 فيصد کمي واقع ہوئي-

 European Medicines Agency نے ايک اور رجحان کي نشاندہي کي ہے اور وہ يہ ہے کہ دوا ساز کمپنيوں کو نئي ادويات کي لاگت کے اخراجات کم کرنے اور ان کي حفاظت اور کارکردگي کو بہتر بنانے کے حوالے سے اعداد و شمار جمع کرنے کي ضرورت ہے-

 سرمايہ کاروں کو تشويش ہے کہ گزشتہ ايک دہائي ميں بڑي دوا ساز کمپنيوں نے تحقيق پر اربوں ڈالر خرچ کيے ہيں مگر منافع کي شرح کم ہےسرمايہ کاروں کو تشويش ہے کہ گزشتہ ايک دہائي ميں بڑي دوا ساز کمپنيوں نے تحقيق پر اربوں ڈالر خرچ کيے ہيں مگر منافع کي شرح کم ہےاس ميں برطانيہ کے National Institute for Health and Clinical Excellence  اور جرمني کے Institute for Quality and Efficiency in Health Care جيسے نگران اداروں کے بڑھتے ہوئے اثر و رسوخ کي عکاسي ہوتي ہے-

 يورپي ايجنسي نے کہا کہ اسے دوا ساز کمپنيوں کي جانب سے طلب کيے گئے سائنسي مشوروں کي درخواستوں ميں بھي دس فيصد اضافے کي توقع ہے-

 European Medicines Agency کے 2012ء کے بجٹ ميں 6.5 فيصد اضافہ کر کے اسے 222 ملين يورو کے قريب کر ديا جائے گا- اس کا بڑا حصہ يا 171 ملين يورو دوا ساز کمپنيوں کي ادويات کا جائزہ لينے کي فيسوں سے حاصل کيا جائے گا جبکہ باقي يورپي يونين ادا کرے گي-

Last modified on شنبه, 03 خرداد 1393 09:53
Login to post comments