×

هشدار

JUser: :_بارگذاری :نمی توان کاربر را با این شناسه بارگذاری کرد: 830

احد میں مسلمانوں کی شکست کے اسباب

بهمن 17, 1392 468

جنگ کے پہلے مرحلہ میں

ساپہ اسلام کی فتح اور بعد کے مرحلہ میں ان کی شکست کی وجہ احد کے واقعات دیکھنے کے بعد بڑی آسانی سے واضح ہو جاتی ہے۔ لیکن یہاں وحی کی زبان سے مسلمانوں کی شکست کی وجوہ مختصراً بیان کی جاتی ہیں وہ وجوہ مندرجہ ذیل ہیں:

جنگ کے لیے منظم نہ ہونا سردار کی نافرمانی، جنگی اعتبار سے اہم جگہ کو چھوڑ دینا مسلمانوں کی شکست کے اہم وجوہات ہیں۔ قرآن کہتا ہے کہ: خدا نے (احد میں دشمنوں پر) فتحیابی کا تم سے سچا وعدہ کیا۔ اس موقع پر تم اس کے فرمان کے مطابق جنگ کر رہے تے (اور یہ کامیابی جاری تھی) یہاں تک کہ تم سست ہوگئے اور اپنے کام میں نزاع کرنے لگے۔ جس چیز کو تم دوست رکھتے تھے (دشمن پر غلبہ کو) اس چیز کو تمہیں دکھا دیا گیا پھر اس کے عد تم نے نافرمانی کی۔

ایمان کی کمزوری اور دنیا پرستی، نئے نئے مسلمان ہونے والوں میں ایک گروہ نے دشمن کا پیچھا کرنے کے بجائے مالِ غنیمت جمع کرنے کو ترجیح دی اور اسلحہ رکھ کر غنیمت جمع کرنے لگا۔ قرآن مندرجہ بالا آیات کے آخر میں کہتا ہے کہ: تم میں سے بعض دنیا طلب تھے اور بعض آخرت کے خواہاں اس کے بعد اللہ نے ت کو ان سے منصرف کر دیا (اور تمہاری کامیابی شکست پر تمام ہوئی) تاکہ تم کو آزمائے۔

پیغمبر کے قتل کی افواہ اور وہ اس طرح کہ بعض مسلمان ت اسلام کی بنیاد ہی سے ناامید ہوگئے تھے قرآن اس سلسلہ میں کہتا ہے کہ: محمد صرف رسول خدا ہیں ان سے پہلے بھی بہت سے رسول گزر چکے ہیں۔ تو کیا اگر وہ مر جائیں یا شہادت پا جائیں تو کیا تم اپنے جاہلیت کے دین پر پلٹ جاؤ گے۔

(آل عمران:۱۵۲، ۱۴۴)

Last modified on چهارشنبه, 24 ارديبهشت 1393 09:52
Login to post comments