×

هشدار

JUser: :_بارگذاری :نمی توان کاربر را با این شناسه بارگذاری کرد: 830

شیخ مفید کی جلاوطنی اور گرفتاری

تیر 21, 1393 325

مختصر طور پر ہم یہ کہہ سکتے ہیں کہ اس دور میں شیعوں کو حاصل ہونے والی آزادی زیادہ پائیدار نہ تھی کیونکہ عضدالدولہ کے دور میں اور اس

کے دور حکومت کے بعد شیعہ و سنی فسادات کی وجہ سے متعدد بار شیخ مفید کو گرفتار کیا گیا اور بعد میں جلاوطن کر دیا گیا ۔ ابن اثیر کہتا ہے کہ سن 393 ہجری میں بھاءالدولہ ( عضدالدولہ کا بیٹا ) نے حکومت پر قبضہ کیا اور اس دور میں بغداد شورشوں کا شکار ہو گیا ۔ بھاءالدولہ نے اپنے لشکر کو بغداد کی طرف روانہ کیا اور اس نے شیعہ و سنی فرقہ سے وابستہ لوگوں کو اپنے فرقے کے بارے میں اظہار نظر کرنے سے منع کر دیا اور شیخ مفید کو جلاوطن کر دیا گیا ۔
ابن اثیر مزید لکھتا ہے کہ سن 409 ہجری میں سلطان الدولہ ( بھاءالدولہ کا بیٹا ) نے ابن سھلان کو بغداد کی حکومت کا منصب دے دیا اور جب وہ بغداد میں داخل ہوا تو ابوعبداللہ بن نعمان نے شیعہ فقیہ کو جلاوطن کر دیا ۔
ان گرفتاریوں اور جلاوطنی کو بعض اوقات جان بوجھ کر انجام دیا جاتا تاکہ سنی اکثریت کے شیعہ اقلیت پر ہونے والے حملوں کو قابو کیا جا سکے جو کہ بغداد کے علاقے " کرخ "  میں ہوتے جہاں پر شیخ مفید رہائش پذیر تھے ۔

Login to post comments