×

هشدار

JUser: :_بارگذاری :نمی توان کاربر را با این شناسه بارگذاری کرد: 830

ظہور مہدی (عج) اور حجازیوں کا رد عمل!

مرداد 13, 1393 813

سیاسی عدم استحکام اور اقتدار کے حصول کے لئے اندرونی خانہ جنگی کی وجہ سے مخالف قوتیں اور دشمنان اہل بیت (عج) مقتدر حریف نہ

ہونے کی وجہ سے علاقے میں سرگرم عمل ہونگے۔ وہ حکمران نظام کی باقیماندہ عسکری قوتوں کی مدد سے متحرک ہونگے اور ان کے اقدامات اور کرتوت امام (عج) اور شیعیان اہل بیت (ع) کے ساتھ ان کی دشمنی کو نمایاں کرتے ہیں۔ ان کے مندرجہ ذیل اقدامات خاص طور پر قابل ذکر ہیں:
1۔ رجب میں سفیانی کے خروج اور رمضان میں ندائے آسمانی کے بعد اور ظہور سے چند ماہ قبل، مومنین جوق در جوق مکہ کی طرف روانہ ہونگے تا کہ اپنے امام (عج) کی مدد کریں۔ دشمنان اہل بیت (ع) مومنین اور اصحاب امام (عج) کے پر شک کریں گے اور ان کی نابودی کا فیصلہ کریں گے اور ان کے خلاف سازشوں کا سہارا لیں گے۔ نیز ابوبصیر کی روایت کے مطابق امام صادق (ع) نے فرمایا: "اس زمانے میں بہت سے مومنین گرفتار ہوکر جیلوں میں بند کئے جائیں گے"۔ (1)
2۔ حکمران نظام کے باقیات اور تکفیری جماعتیں، مدینہ منورہ میں ہولناک جرائم کا ارتکاب کریں گے۔ وہ ایک ہاشمی نوجوان (محمد) کو اس کی ہمشیرہ (فاطمہ) کے ہمراہ، قتل کریں گے اور انہیں مسجد النبی (ص) کے دروازے پر لٹکائیں گے اور یہ سب یہ ظاہر کرنے کے لئے ہوگا کہ وہ امام مہدی منتظَر (عج) کے پیروکاروں اور اصحاب و انصار کے ساتھ کس قدر عداوت اور دشمنی رکھتے ہیں!۔
3۔ پچیس ذوالحجہ کو ظہور سے پندرہ دن قبل، امام (عج) ایک ہاشمی مرد کو ایلچی کے طور پر مکہ مکرمہ روانہ کریں گے تاکہ حالات حاضرہ اور انقلاب کے لئے ماحول کی تیاری کا جائزہ لیں۔ وہ (یعنی نفس زکیہ) حرم مکہ میں داخل ہونگے اور رکن و مقام کے درمیان کھڑے ہوکر حاضرین کو زبانی طور پر امام زمانہ (عج) کا پیغام پہنچائیں گے۔ حجاز میں حکومت کے باقیات ایک عظیم جرم کا ارتکاب کریں گے اور امام (عج) کے ایلچی کو فوری طور پر رکن و مقام کے درمیان ـ مسجدالحرام اور حرام مہینے میں ـ قتل کریں گے۔
چنانچہ معلوم ہوتا ہے کہ اہلیان حجاز امام زمانہ (عج) کے ظہور کے خواہاں نہیں ہیں اور یہ مسئلہ امام (عج) سے مخفی نہ ہوگا۔ جیسا کہ امام باقر (ع) نے فرمایا: "یہ لوگ مجھے نہیں چاہتے لیکن میں ان ہی طرف بھیجا گیا ہوں تا کہ ان پر اتمام حجت کروں۔۔۔"۔
۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
1۔ بشاره الاسلام، ص 210۔

Login to post comments